حج اور عید مبارک

تمام حاجیوں کو حج مبارک ہو۔ اور سب قارئین کو عید مبارک۔

تمام حاجیوں کو حج مبارک ہو۔ اور سب قارئین کو عید مبارک۔

مجھے نہیں معلوم کہ عید جمعرات کو کیوں ہے۔ ادھر اٹلانٹا میں مساجد سعودی عرب کی تقلید کرتی ہیں اور اس دفعہ سعودیوں نے تین دن بعد تاریخ تبدیل کی ہے۔

Haj Mubarak to the hajjis and a happy Eid to everyone.

I have no clue why the Eid in Atlanta is on Thursday while most of the rest of the US is celebrating it on Friday. I think the mosques here follow Saudi Arabia and this year the Saudis first announced the start of the new month on January 12 (Eid-ul-Azha is on the 10th of the last month of the lunar Islamic calendar) and 3 days later changed it to January 11.

پاسپورٹ اور مذہب

پاکستان کی مذہبی جماعتیں آجکل اس بات پر جذباتی ہو گئی ہیں کہ پاکستانی پاسپورٹ سے مذہب کا کالم نکالا جا رہا ہے۔

پاکستان کی مذہبی جماعتیں آجکل اس بات پر جذباتی ہو گئی ہیں کہ پاکستانی پاسپورٹ سے مذہب کا کالم نکالا جا رہا ہے۔ بی بی سی اس بارے میں لکھتا ہے۔

پاکستان میں مختلف مذہبی و سیاسی جماعتیں نئے پاسپورٹ میں مذہب کے خانے کو خارج کئے جانے کے فیصلے کے خلاف جمعہ کو یوم احتجاج منا رہی ہیں۔

مساجد میں جمعہ کے اجتماعات میں حکومت کے اس فیصلے کو تنقید کانشانہ بنایا جائے گا اور مختلف مقامات پر احتجاجی مظاہرے بھی کیے جائیں گے۔

حکومت نے چند مہینے پہلے نئے پاسپورٹ جاری کرنے کا سلسلے شروع کیا جو مشین کے ذریعے پڑھے جا سکتے ہیں۔ ان پاسپورٹوں میں لوگوں سے ان کے مذہب کے بارے میں نہیں پوچھا گیا۔

مذہبی جماعتوں نے اس حکومتی فیصلے کو ملک کو ’لادینی ریاست بنانے کی ایک کوشش‘ قرار دیا ہے۔

جماعت اسلامی کے ترجمان امیر العظیم نے کہا ہے کہ ملک بھر میں ایم ایم اے کے قائدین احتجاجی مظاہروں میں شرکت کریں گے اور خطاب بھی کریں گے۔

یوم احتجاج منانے کا فیصلہ ایک ہفتے قبل اسلام آباد میں ہونے والی آل پارٹیز ختم نبوت کانفرنس میں کیا گیا تھا اور اس کا اعلان قائد حزب اختلاف اور چھ دینی جماعتوں کے اتحاد متحدہ مجلس عمل کے صدر قاضی حسین احمد نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا تھا۔

اس اجلاس میں مختلف سیاسی جماعتوں کے علاوہ مسلم لیگ(ن) کے رہنماؤں نے بھی شرکت کی تھی۔

اس اجلاس میں کہاگیا تھا کہ پاسپورٹ سے مذہب کا خانہ جماعت احمدیہ سے تعلق رکھنے والے افراد کے دباؤ پر خارج کیا گیا ہے۔

پاکستان کی قانون ساز اسمبلی نے تیس سال پہلے جماعت احمدیہ سے تعلق رکھنے والے افراد کو غیرمسلم قرار دیدیا تھا۔

جماعت احمدیہ سے تعلق رکھنے والے افراد کو اس بات پر اعتراض ہے کہ انہیں غیر مسلم قرار دیا جاتا ہے۔

مبصرین کا کہنا ہے پاسپورٹ میں مذہب کے خانے کی صورت میں جماعت احمدیہ کے لوگوں کو واضح طور پر غیر مسلم لکھا جاسکتا ہے اور ان کی بطور غیر مسلم شناخت واضح ہو سکتی ہے۔

اس سلسلے میں حزب اختلاف کی ایک بڑی سیاسی جماعت پیپلز پارٹی نے اس حکومتی فیصلے کی حمایت کی ہے اور وہ دعوت کے باجود آل پارٹیز ختم نبوت کانفرنس میں شریک نہیں ہوئی تھی اور پیپلز پارٹی کے ترجمان نے باقاعدہ اعلان کیا تھا کہ ان کی جماعت پاسپورٹ سے مذہب کے خانے کے ختم کیے جانے کے حق میں ہے۔

دوسری طرف حکمران مسلم لیگ کے صدر چودھری شجاعت حسین یہ بیان جاری کر چکے ہیں کہ پاسپورٹ میں مذہب کے خانے کا موجود رہنا ضروری ہے۔

نیا پاسپورٹ ICAO کی تجاویز کے مطابق تیار کیا جا رہا ہے۔ لہذا اس میں مذہب کا خانہ نہیں ہے۔ میری سمجھ میں نہیں آتا کہ پاسپورٹ میں مذہب لکھنے کی کیا ضرورت ہے۔ پاسپورٹ کا مقصد بیرون ملک سفر ہے۔ دوسرے ملکوں کو کیا پرواہ کہ کوئی پاکستانی مسلمان ہے کہ نہیں۔ کچھ مذہبی سیاستدانوں کا کہنا ہے کہ نئے پاسپورٹ کے نتیجے میں احمدی سعودی عرب حج یا عمرہ کرنے جا سکیں گے۔ مگر یہ تو سعودی حکومت فیصلہ کرتی ہے کہ کون ان کے ملک میں داخل ہو سکتا ہے۔ پاکستانی پاسپورٹ کا اس سے کیا تعلق؟ ایک اور بات واضح ہے کہ پاکستان کے اسلامی سیاستدانوں میں احمدیوں کے خلاف کھلا تعصب پایا جاتا ہے۔

اگر پاکستان مذہبی اقلیتوں کے ساتھ برا سلوک کرنا بھی چاہتا ہے تو اس کے لئے شناختی کارڈ موجود ہے پاسپورٹ استعمال کرنے کی کیا ضرورت ہے؟ میری نظر میں تو اقلیتوں کے ساتھ کسی بھی قسم کا برا رویہ بالکل غلط ہے اور پاسپورٹ یا شناختی کارڈ میں مذہب کے خانے کی کوئی ضرورت نہیں۔

POSTSCRIPT: For those who can’t read Urdu, this post is about the stupid protests over the removal of the “religion” column from the Pakistani passport. Here is a BBC News article about it in English.

عید مبارک

تمام قارئین کو عید الفطر مبارک ہو۔

تمام قارئین کو عید الفطر مبارک ہو۔

A happy Eid to everyone.

No, I have no idea why Eid is on Saturday in Atlanta when the rest of the US is celebrating it on Sunday.

And happy Diwali too.

Urdu Font / اردو فونٹ

آصف نے یہ بہت اچھا کام کیا ہے کہ اردو کے فونٹ اکٹھے کر دیئے ہیں۔ اب قارئین کو لمبی ہدایات نہیں دینی پڑیں گی کہ فونٹ کیسے انسٹال کرنا ہے۔

آصف نے یہ بہت اچھا کام کیا ہے کہ اردو کے فونٹ اکٹھے کر دیئے ہیں۔ اب قارئین کو لمبی ہدایات نہیں دینی پڑیں گی کہ فونٹ کیسے انسٹال کرنا ہے۔

میں نے سارے نفیس فونٹس (نستعلیق، نسخ، پاکستانی نسخ، ویب نسخ) اور ٹاہوما کو جمع کر کے خود بخود انسٹال ہونے والے ایک چھوٹے سے پروگرام کی شکل میں ترتیب دے دیا ہے جسے یہاں سے ڈاؤن لوڈ کیا جا سکتا ہے ۔ جیسے ہی آپ اسے انسٹال کریں گے تو کمپوٹر کو دوبارہ چلائے بغیر آپ کو مائیکروسافٹ آفس، اور ونڈوز کے دوسرے پروگراموں میں یہ فونٹ دستیاب ہو جائینگے۔ اس کے علاوہ آپ ویب صفحات پر بھی اردو زبان کو ویب نسخ میں پڑھ سکیں گے جو ٹاہوما سے بہت زیادہ خوبصورت ہے۔

آصف کے کہنے پر میں نے بھی ٹاہوما کو ترک کر کے نفیس ویب نسخ استعمال کرنا شروع کر دیا ہے۔ نفیس نسخ ٹاہوما کے مقابلے میں کافی بہتر لگتا ہے۔

اس کے علاوہ میں نے ونڈوز ایکس پی کے لئے ایک فونٹک کیبورڈ بھی ڈاؤنلوڈ کیا ہے۔ اس کی وجہ سے میری ٹائپنگ کی رفتار کافی بہتر ہو گئی ہے۔

اعجاز نے اردو ویب سائٹ کے لئے ایک اچھی تکنیک بتائی ہے جو میرے خیال سے ویب پیج کی سرخیوں کے لئے کافی فائدہ مند ہے۔

Asif has created an installable package of Urdu fonts which takes the hassle of long instructions to Windows users about installing Urdu fonts. He also suggests that everyone use Nafees Web Naskh which looks much better than Tahoma. I have followed his advice. However, if you haven’t got Nafees Web Naskh on your computer, then Tahoma will be used as the backup font.

I also downloaded a phonetic Urdu keyboard layout for Windows XP. This has made a tremendous difference in my Urdu typing speed.

Ejaz has posted an interesting method to use background images instead of text in an Urdu (or any other language) website. The idea is intriguing and useful for headings which you want to pretty up.

ڈھاکہ سے واپسی پر

بہت دنوں سے اردو میں کچھ نہیں لکھا کیونکہ کمپیوٹر پر اردو لکھنے کی مجھے بالکل عادت نہیں ہے۔ آصف، جلال، عمیر اور دانیال اس سلسلے میں بہت بہتر ہیں کہ اردو میں بلاگ کرتے ہیں۔ آج آپ کو فیض احمد فیض کی شاعری پر اکتفا کرنا پڑے گا۔ کسی اور دن میں خود سے کچھ لکھوں گا۔

بہت دنوں سے اردو میں کچھ نہیں لکھا کیونکہ کمپیوٹر پر اردو لکھنے کی مجھے بالکل عادت نہیں ہے۔ آصف، جلال، عمیر اور دانیال اس سلسلے میں بہت بہتر ہیں کہ اردو میں بلاگ کرتے ہیں۔

آج آپ کو فیض احمد فیض کی شاعری پر اکتفا کرنا پڑے گا۔ کسی اور دن میں خود سے کچھ لکھوں گا۔

ہم کہ ٹھہرے اجنبی اتنی ملاقاتوں کے بعد
پھر بنیں گے آشنا کتنی مداراتوں کے بعد
کب نظر میں آۓ گی بے داغ سبزے کی بہار
خون کے دھبے دھلیں گے کتنی برساتوں کے بعد
تھے بہت بے درد لمحے ختم درد عشق کے
تھیں بہت بے مہر صبحیں مہرباں راتوں کے بعد
دل تو چاہا پر شکست دل نے مہلت ہی نہ دی
کچھ گلے شکوے بھی کر لیتے مناجاتوں کے بعد
ان سے جو کہنے گۓ تھے فیض جاں صدقہ کۓ
ان کہی ہی رہ گئی وہ بات سب باتوں کے بعد

اردو بلاگ ویب رنگ

میں نے اردو بلاگز کے لۓ ایک ویب رنگ بنایا ہے۔ اس کا مقصد ان تمام بلاگز کی فہرست جمع کرنا ہے جو اردو میں لکھے جاتے ہیں- میرے بلاگ کے دائیں طرف نیچے بھی اس ویب رنگ کا لنک ہے جہاں سے آپ دوسرے اردو بلاگ جا سکتے ہیں۔

I have created a webring for Urdu bloggers. The purpose is to collect a list of all blogs which are written in Urdu (partially like this one or fully) in one place. Here is the home page for this webring. There is a link for the webring through which you can reach other Urdu weblogs down on the right sidebar.

Currently, there are three blogs on the ring, including Tuzk-e-Jalali by Jalal who has another blog in English and Urdu Blog by Umair Salam.

If you have a weblog where you post, even if ocassionally, in Urdu, please join the webring using the form on the Urdu blogs webring home page. Also, please spread the word about this webring.

میں نے اردو بلاگز کے لۓ ایک ویب رنگ بنایا ہے۔ اس کا مقصد ان تمام بلاگز کی فہرست جمع کرنا ہے جو اردو میں لکھے جاتے ہیں- میرے بلاگ کے دائیں طرف نیچے بھی اس ویب رنگ کا لنک ہے جہاں سے آپ دوسرے اردو بلاگ جا سکتے ہیں-

ابھی اس رنگ میں تین بلاگ ہیں- تزک جلالی جلال کا بلاگ ہے- وہ انگریزی میں بھی لکھتا ہے- عمیر سلام انٹرنیٹ کا پہلا اردو بلاگر ہے-

اگر آپ اپنے بلاگ پر کبھی بھی اردو میں لکھتے ہیں تو اس ویب رنگ میں ضرور شامل ہوں- میں آپ کا مشکور ہوں گا اگر آپ اس اردو بلاگز کی فہرست کا ذکر اور لوگوں سے بھی کریں-

اگر کبھی میری یاد آۓ

یہ نظم عنبر کے لئے ہے کیونکہ وہ مجھ سے یہ نظم سننا پسند کرتی ہے۔ اسے آپ ابرار الحق کی آواز میں سن سکتے ہیں۔

This poem is for Amber who is always asking me to recite it for her. It’s by the Pakistani poet Amjad Islam Amjad. It has also been sung by Abrar ul Haq. (Warning: I can’t figure out if the songs on muziq.net are legal or not.)

Sorry I can’t translate poetry into English.

یہ نظم عنبر کے لئے ہے کیونکہ وہ مجھ سے یہ نظم سننا پسند کرتی ہے۔ اسے آپ ابرار الحق کی آواز میں سن سکتے ہیں۔ مجھے معلوم نہیں کہ muziq.net پر گانے قانون کے مطابق ہیں یا نہیں۔

اگر کبھی میری یاد آۓ
تو چاند راتوں کی دلگیر روشنی میں
کسی ستارے کو دیکھ لینا
اگر وہ نخل فلک سے اڑ کر تمہارے قدموں میں آ گرے تو یہ جان لینا
وہ استعارہ تھا میرے دل کا
اگر نہ آۓ؟ ۔۔۔
مگر یہ ممکن ہی کس طرح ہے کہ کسی پر نگاہ ڈالو
تو اس کی دیوار جاں نہ ٹوٹے
وہ اپنی ہستی نہ بھول جاۓ!!
اگر کبھی میری یاد آۓ
گریز کرتی ہوا کی لہروں پہ ہاتھ رکھنا
میں خشبووں میں تمہیں ملوں گا
مجھے گلابوں کی پتیوں میں تلاش کرنا
میں اوس قطرہ کے آئینے میں تمہیں ملوں گا
اگر ستاروں میں، اوس خشبووں میں
نہ پاؤ مجھ کو
تو اپنے قدموں میں دیکھ لینا
میں گرد ہوتی مسافتوں میں تمہیں ملوں گا
کہیں پہ روشن چراغ دیکھو تو جان لینا
کہ ہر پتنگے کے ساتھ میں بھی سلگ چکا ہوں
تم اپنے ہاتھوں سے ان پتنگوں کی خاک دریا میں ڈال دینا
میں خاک بن کر سمندر میں سفر کروں گا
کسی نہ دیکھے ہوۓ جزیرے پہ رک کے تمہیں صدائیں دوں گا
سمندروں کے سفر پہ نکلو
تو اس جزیرے پہ کبھی اترنا!!